سپریم کورٹ نے ایف آئی اے ،پیمرا، قانون سازوں کو صحافیوں کو ہراساں کرنے کے مقدمے میں طلبی

سپریم کورٹ نے ایف آئی اے ،پیمرا، قانون سازوں کو صحافیوں کو ہراساں کرنے کے مقدمے میں طلبی
ا

سپریم کورٹ نے پیر کو اٹارنی جنرل ، تمام ایڈووکیٹ جنرلز ، چیئرمین پیمرا ، ڈی جی ایف آئی اے اور آئی جی پولیس اسلام آباد کو نوٹس جاری کیے۔ جسٹس اعجازالاحسن کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے ۔ازخود سماعت کے دوران اسلام آباد ہائیکورٹ (آئی ایچ سی) سے میڈیا پرسنز کے زیر التوا مقدمات کی صورتحال سے متعلق رپورٹ بھی طلب کی۔

عدالت نے اٹارنی جنرل ، تمام ایڈووکیٹ جنرلز ، چیئرمین پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) ، ڈائریکٹر جنرل فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) ۔اور انسپکٹر جنرل پولیس اسلام آباد کیپیٹل ٹیریٹری کو کیس میں طلب کیا۔ عدالت نے کیس کی مزید سماعت 15 ستمبر تک ملتوی کردی۔ قبل ازیں درخواست گزار عبدالقیوم صدیقی اور دیگر نے ۔سپریم کورٹ میں دائر اپنی درخواست واپس لے لی۔ درخواست گزاروں نے عدالت میں اپنی درخواست میں کہا ۔کہ وہ اس معاملے پر اپنی درخواست واپس لے رہے ہیں۔

سپریم کورٹ نے جمعہ کو صحافیوں کو ہراساں کرنے کے ۔کیس کی سماعت کے لیے تین رکنی بینچ تشکیل دیا۔ 26 اگست کو ، سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بینچ نے ۔جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں دو رکنی بینچ کی جانب سے لیا ۔گیا ازخود نوٹس واپس لے لیا تھا ۔جس میں کہا گیا تھا کہ صرف چیف جسٹس ہی آئینی استحقاق کا استعمال کرتے ہوئے۔ معاملے کا نوٹس لے سکتے ہیں۔

..مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں