کابل ایئرپورٹ پر حملے میں 12 امریکی فوجی ہلاک، 15 زخمی

کابل ایئرپورٹ پر حملے میں 12 امریکی فوجی ہلاک، 15 زخمی

کابل ایئرپورٹ پر حملے میں 12 امریکی فوجی ہلاک، 15 زخمی۔

افغانستان میں جمعرات کو کابل ایئرپورٹ پر ہونے والے حملے میں کم از کم 12 امریکی فوجی ہلاک ہو گئے۔

پینٹاگون کے پریس سیکریٹری جان ایف کربی اور سینٹ کام کے کمانڈر میرین کور جنرل کینتھ ایف میکنزی جونیئر نے پینٹاگون میں ایک نیوز بریفنگ میں بتایا۔ کہ اس حملے میں 15 دیگر امریکی فوجی بھی زخمی ہوئے ہیں۔

صدر جو بائیڈن اور دیگر اعلیٰ امریکی عہدیدار بار بار آئی۔ ایس۔ آئیس۔ ایس – کے۔ کا ذکر کر چکے ہیں۔ جو افغانستان میں مغربی اہداف پر حملہ کرنے کے خواہاں ہیں۔

ISIS-K یا اسلامک اسٹیٹ خراسان صوبہ (I۔S۔K۔P۔) داعش (یا نام نہاد اسلامک اسٹیٹ) کا علاقائی الحاق ہے جو افغانستان میں سرگرم ہے۔ یہ اس وقت افغانستان میں کام کرنے والے تمام جہادی عسکری گروہوں میں سے انتہائی انتہا پسند اور پرتشدد ہے۔

یہ جنوری 2015 میں عراق اور شام میں آئی ایس کی طاقت کے عروج پر قائم کیا گیا تھا۔ اس سے پہلے کہ اس کی خود ساختہ خلافت کو امریکی قیادت والے اتحاد نے شکست دی اور ختم کر دیا۔

ایک سینئر ہیلتھ عہدیدار نے بتایا کہ کابل ایئرپورٹ پر ہونے والے دھماکوں میں کم از کم 60 افراد ہلاک اور 140 دیگر زخمی ہوئے۔

پینٹاگون کا کہنا ہے کہ انخلاء جاری ہے۔

تاہم امریکی سینٹرل کمانڈ کے جنرل کینتھ میک کینزی نے کہا۔ کہ ہم اس حملے کے باوجود مشن کو جاری رکھیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تقریبا 1،000 ایک ہزار امریکی شہری اب بھی افغانستان میں موجود ہیں۔

..مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں