وزیر اعظم عمران خان اورترک صدر طیب اردگان کا افغانستان کی صورتحال پر تبادلہ خیال

وزیر اعظم عمران خان اورترک صدر طیب اردگان کا افغانستان کی صورتحال پر تبادلہ خیال

وزیر اعظم عمران خان اورترک صدر طیب اردگان کا افغانستان کی صورتحال پر تبادلہ خیال۔

طالبان کے افغان دارالحکومت پر قبضے کے فورا بعد ، ترک صدر طیب اردوان نے وزیراعظم عمران خان کو فون کیا۔ دونوں رہنماؤں نے جنگ زدہ ملک میں تیزی سے ابھرتی ہوئی صورتحال کا جائزہ لیا۔

وزیراعظم آفس (پی۔ ایم۔ او۔) کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ “وزیراعظم نے بتایا کہ پاکستان سفارتی عملے اور بین الاقوامی اداروں کے عملے اور دیگر افراد کے انخلا میں سہولت فراہم کر رہا ہے ، جیسا کہ درخواست کی گئی ہے”۔

عمران خان نے مزید کہا کہ قومی سلامتی کمیٹی (این۔ ایس۔ سی۔) کے اجلاس میں ابھرتی ہوئی صورتحال پر مزید غور کیا جائے گا۔ جبکہ دونوں رہنما اپنی کوششوں کو مربوط بنانے کے لیے میٹنگ کے بعد دوبارہ مشاورت کریں گے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ وزیراعظم نے افغانستان میں ایک جامع سیاسی حل کی حمایت میں تمام کوششیں جاری رکھنے کے ملک کے عزم کی تصدیق کی۔

اس سے قبل طیب اردگان نے کہا کہ افغانستان میں امن اور استحکام لانا پاکستان کا اہم فرض ہے۔

ترک صدر نے پاکستانی ہم منصب عارف علوی کے ساتھ بات کرتے ہوئے جو کہ ترکی کے سرکاری دورے پر ہیں۔ کہا کہ ہمیں ایران کے ذریعے افغان مہاجرین کی لہر کا سامنا ہے۔ اور انہوں نے یہ یقین دہانی بھی کرائی۔ کہ ان کا ملک افغانستان اور خطے میں میں استحکام لانے کے لیے ہر ممکن کوشش جاری رکھے گا۔

اتوار کو طالبان نے افغانستان کے صدارتی محل کا کنٹرول سنبھالنے کا دعویٰ کیا ہے۔ کابل میں موجود دو سینئر طالبان کمانڈر اور تین طالبان ذرائع نے صدر اشرف غنی کے ملک چھوڑنے کے بعد اس پیش رفت کی تصدیق کی۔

..مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں