مقبوضہ کشمیر میں فوجی محاصرے کے 2 سال مکمل، ملک میں آج یوم استحصال منایا جا رہا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں فوجی محاصرے کے 2 سال مکمل، ملک میں آج یوم استحصال منایا جا رہا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں فوجی محاصرے کے 2 سال مکمل، ملک میں آج یوم استحصال منایا جا رہا ہے۔

یوم استحصال آج کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور بھارتی غیر قانونی مقبوضہ جموں و کشمیر میں فوجی محاصرے کے دوسرے سال کے موقع پر منایا جا رہا ہے۔

5 اگست ، 2019 کو ، نریندر مودی کی زیر قیادت بی۔ جے۔ پی۔ حکومت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت کو منسوخ کرکے کشمیر میں آبادیاتی رنگ برداری کا آغاز کیا۔

دریں اثنا ، مظلوم کشمیریوں کے خلاف بھارتی یکطرفہ غیر قانونی اقدامات کے ساتھ ساتھ وادی میں بھارتی افواج کے مظالم کی مذمت کرنے کے لیے کئی تقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے۔

2

وفاقی دارالحکومت سمیت تمام اہم شہروں میں یکجہتی واک ، تقریبات اور سیمینارز کا اہتمام کیا گیا ہے۔ یکجہتی ریلیوں کے شرکاء سیاہ پٹیاں باندھ کر پاکستان اور آزاد کشمیر کے جھنڈے اٹھائے ہوئے ہوں گے۔ جبکہ پاکستان بھر میں ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے گی۔ اور ٹریفک کو ایک منٹ کے لیے روک دیا جائے گا اور سائرن بجائے جائیں گے۔

مزید یہ کہ ریڈیو اور ٹی وی اسٹیشنوں نے ایک منٹ کی خاموشی کے فورا بعد۔ پاکستان اور آزاد کشمیر کے قومی ترانے بجائے۔

کشمیریوں کی حالت زار کو اجاگر کرنے اور بھارتی غیر قانونی مقبوضہ جموں و کشمیر میں قابض افواج کے مظالم کو بے نقاب کرنے کے لیے۔ وفاقی دارالحکومت اور دیگر صوبائی دارالحکومتوں کی مرکزی شاہراہوں پر پوسٹر اور بل بورڈ آویزاں کیے گئے ہیں۔

وزارت خارجہ نے اس دن کے موقع پر ایک ریلی کا اہتمام کیا۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مظلوم کشمیریوں کی حمایت جاری رکھے گا۔ وہ دن دور نہیں جب کشمیریوں کو بھارتی قبضے سے آزادی مل جائے گی۔ 5 اگست کے بھارتی اقدامات کو کشمیر کے لوگوں اور باقی دنیا نے مسترد کر دیا ہے۔

..مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں