سرگودھا میں پاکستانی نژاد آسٹریلوی خاتون کو سسرالیوں نے کلہاڑی مار کر قتل کر دیا۔

سرگودھا میں پاکستانی نژاد آسٹریلوی خاتون کو سسرالیوں نے کلہاڑی مار کر قتل کر دیا۔

سرگودھا میں پاکستانی نژاد آسٹریلوی خاتون کو سسرالیوں نے کلہاڑی مار کر قتل کر دیا۔

اسلام آباد – پنجاب پولیس ایک پاکستانی آسٹریلوی خاتون کے قتل کی تحقیقات کر رہی ہے جسے مبینہ طور پر اس کے سسرال والوں نے 12 جون کو قتل کر دیا تھا۔

ساجدہ تسنیم کے قتل کا مقدمہ درج کر کے مرکزی ملزم اس کے سسر کو گرفتار کر لیا گیا۔ مزید تین ملزمان، ساجدہ کی ساس اور دو رشتہ دار تاحال فرار ہیں۔

ساجدہ کے والد شیر محمد نے پولیس کو بتایا کہ قتل کے وقت اس کا سسر جائے وقوعہ پر موجود تھا۔

اس نے بتایا کہ ساجدہ کے گھر کا گیٹ کھلا ہوا تھا جب وہ اسے دیکھنے وہاں پہنچا تو اس نے اس کے سسر مختار احمد کو اسے گالیاں دیتے سنا۔

انہوں نے کہا کہ مختار نے ساجدہ کے منہ میں روئی بھر دی اور پھر کلہاڑی سے حملہ کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ مختار نے ان سے کہا کہ مداخلت نہ کریں ورنہ اسے بھی قتل کردیا جائے گا۔

اطلاعات ہیں کہ تین بچوں کی ماں ساجدہ نے این ای ڈی یونیورسٹی میں سول انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کی ہے۔ بعد میں اس نے سول ایوی ایشن اتھارٹی آف پاکستان میں اسسٹنٹ ایئر ٹریفک کنٹرولر کے طور پر کام کیا۔

آسٹریلوی شہری نے تقریباً 12 سال قبل ایوب احمد کے ساتھ شادی کی تھی۔ یہ جوڑا 2013 میں آسٹریلیا منتقل ہونے سے پہلے بحرین اور سعودی عرب میں مقیم تھا۔

یہ جوڑا حال ہی میں پاکستان آیا تھا اور ایوب کے والدین کے ساتھ رہ رہا تھا۔ مبینہ طور پر ساجدہ کے اپنے سسرال آنے کے کچھ دنوں بعد کچھ مسائل پیدا ہوگئے اور مبینہ طور پر اس کے سسرال والوں نے اسے ایک دو بار تشدد کا نشانہ بنایا۔

کچھ رپورٹس کے مطابق ساجدہ اپنے بچوں کی بہتر تعلیم کے لیے واپس آسٹریلیا جانا چاہتی تھی لیکن سسرال والوں نے اسے اجازت نہیں دی۔

ساجدہ کے والدین نے میڈیا کو بتایا کہ آسٹریلوی ہائی کمیشن نے ان سے رابطہ کیا ہے اور متاثرہ کو انصاف دلانے میں مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔

مزید پڑھنے کے لیے یہاں پر کلک کریں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں