گجرات میں ‘غیرت کے نام پر قتل’ کے ایک اور واقعے میں دو ہسپانوی پاکستانی بہنیں قتل

گجرات میں 'غیرت کے نام پر قتل' کے ایک اور واقعے میں دو ہسپانوی پاکستانی بہنیں قتل

گجرات میں ‘غیرت کے نام پر قتل’ کے ایک اور واقعے میں دو ہسپانوی پاکستانی بہنیں قتل

گجرات – دو ہسپانوی پاکستانی بہنیں، جن کی شناخت انیسہ عباس اور عروج عباس کے نام سے ہوئی ہے، کو ان کے چچا نے مبینہ طور پر قتل کر دیا ہے۔

مقامی پولیس نے میڈیا کو بتایا کہ مقتولہ بہنوں پر ان کے شوہروں نے، جو ان کے کزن بھی تھے، اسپین ہجرت کرنے کے لیے دباؤ ڈالا تھا۔

انیسہ اور عروج مبینہ طور پر اپنے کزنز کے ساتھ اپنی طے شدہ شادیوں سے خوش نہیں تھے اور علیحدگی کے خواہاں تھے۔ دونوں کو حال ہی میں یورپی ملک سے پنجاب کے شہر گجرات واپس لایا گیا، جہاں انہیں تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور بعد ازاں جمعہ کو گولی مار دی گئی۔

مقتول خواتین، جن کی عمریں 21 اور 23 سال تھیں، اپنے شوہروں کو اسپین میں اپنے ساتھ آباد کرانے میں ناکام رہیں اور ان کے سسرال والوں نے ان پر جان بوجھ کر طریقہ کار میں تاخیر کا الزام لگایا۔

پولیس حکام نے بتایا کہ متوفی بہنیں ان کی رہائش گاہ پر قتل شدہ پائی گئیں۔

ڈی پی او گجرات سمیت علاقائی حکام موقع پر پہنچ گئے۔

بعد ازاں ریسکیو اہلکاروں نے لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے لیے مقامی اسپتال منتقل کردیا۔

پولیس نے مقدمہ درج کر کے فرار ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارنا شروع کر دیے ہیں۔

پاکستان میں ہسپانوی سفارت خانے نے اس معاملے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا کیونکہ تحقیقات جاری ہیں۔

جنوبی ایشیائی ملک سوشل میڈیا سنسیشن قندیل بلوچ کے بہیمانہ قتل کے بعد سرخیوں میں رہا جسے جولائی 2016 میں اس کے بھائی نے 26 سال کی عمر میں قتل کر دیا تھا۔

ہیومن رائٹس واچ نے دعویٰ کیا کہ خواتین کے خلاف پرتشدد حملے پاکستان میں ایک سنگین مسئلہ بنے ہوئے ہیں اور ہر سال ملک بھر میں کم و بیش ایک ہزار ایسے واقعات رپورٹ ہوتے ہیں۔

مزید پڑھنے کے لیے یہاں پر کلک کریں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں