پاکستان میں انسانی حقوق کے نئے وزیر ہیں۔

پاکستان میں انسانی حقوق کے نئے وزیر ہیں۔

پاکستان میں انسانی حقوق کے نئے وزیر ہیں۔

اسلام آباد – میاں ریاض حسین پیرزادہ نے وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں سنبھال لی ہیں کیونکہ وزیر اعظم شہباز شریف نے چار وفاقی وزراء اور ایک وزیر مملکت کو قلمدان دیے ہیں۔

ایک سرکاری نشریاتی ادارے کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 73 سالہ پیرزادہ کا ملک کے وفاقی دارالحکومت میں انسانی حقوق کے سیکرٹری اور دیگر سینئر افسران نے خیرمقدم کیا۔

وفاقی سیکرٹری وزارت انسانی حقوق انعام اللہ خان نے پیرزادہ کو وزارت کے کام کے بارے میں بریفنگ دی۔

تجربہ کار سیاستدان اپنے 37 سالہ سیاسی کیریئر میں مختلف عہدوں پر فائز رہے۔ وہ پہلی بار 1985 میں پنجاب کے ایم پی اے کے طور پر منتخب ہوئے تھے۔ پیپلز پارٹی کے سابق رہنما پھر قومی اسمبلی کے لیے منتخب ہوئے جہاں انہوں نے 1997 تک خدمات انجام دیں۔

سنہ 2011 میں پیرزادہ کو وفاقی وزیر برائے اقلیت بنایا گیا اور بعد ازاں وہ وفاقی وزیر صحت کے عہدے پر فائز رہے۔

مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں انہیں وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ نامزد کیا گیا اور بعد میں وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ کے طور پر خدمات انجام دیں۔

دریں اثناء شریف کی زیرقیادت وفاقی کابینہ میں چار وفاقی وزراء کو شامل کیا گیا۔ خرم دستگیر خان کو اختیارات کا قلمدان، سردار ایاز صادق کو اقتصادی امور اور مرتضیٰ جاوید عباسی کو پارلیمانی امور کا قلمدان سونپا گیا ہے۔

مزید پڑھنے کے لیے یہاں پر کلک کریں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں