فرانس سے لے کر امریکا تک پی ٹی آئی کے حامی عمران خان کی برطرفی کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے

فرانس سے لے کر امریکا تک پی ٹی آئی کے حامی عمران خان کی برطرفی کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے

فرانس سے لے کر امریکا تک پی ٹی آئی کے حامی عمران خان کی برطرفی کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے

پیرس/واشنگٹن – سابق پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کی برطرفی نے جنوبی ایشیائی ملک کو ایک غیر یقینی سیاسی راہ پر ڈال دیا ہے، ان کے حامی نہ صرف ملک میں بلکہ بیرون ملک بھی سڑکوں پر نکل آئے ہیں۔

پی ٹی آئی کے چیئرمین، جنہیں مشترکہ اپوزیشن اتحاد کی جانب سے تحریک عدم اعتماد میں ووٹ دینے کے بعد ہٹایا گیا تھا، نے اپنے عزم کا اعادہ کیا کہ وہ احتجاج کی قیادت کریں گے اور عوام کو سڑکوں پر لے جائیں گے جب تک کہ مسلم لیگ (ن) کی قیادت والی حکومت نئے انتخابات کا اعلان نہیں کرتی۔

اسی طرح فرانس کے دارالحکومت میں سابق وزیراعظم عمران خان سے اظہار یکجہتی کے لیے مظاہرے کیے گئے۔ پاکستانی اور پی ٹی آئی کے جھنڈے لہراتے ہوئے اور نعرے لگاتے ہوئے عوام نے پی ٹی آئی رہنما زاہد اقبال ہاشمی کی قیادت میں ریلی نکالی۔

انہوں نے عمران خان کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ کرکٹر بنے سیاست دان نے ایک آزاد خارجہ پالیسی پر عمل پیرا ہونے کے علاوہ بدعنوانی سے لڑنے کا یقین دلایا۔

دریں اثنا، سینٹرل رائٹ پی ٹی آئی کے حامیوں نے بھی ہارٹ فورڈ کنیکٹی کٹ میں خان کی اقتدار سے بے دخلی کے خلاف احتجاج کیا۔ احتجاج میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی اور پاکستانی پرچموں کے ساتھ کئی تخلیقی پلے کارڈز بھی دیکھے گئے۔

طاقت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اور آگے کی سیاسی غیر یقینی صورتحال کا پیش خیمہ، پی ٹی آئی کے حامیوں نے متحدہ عرب امارات، ترکی، اسپین اور دیگر ممالک میں نئی ​​قیادت کے خلاف احتجاج بھی کیا جو کہ ان کے مطابق مسٹر خان کو ہٹانے کے لیے امریکہ کے ساتھ ملی بھگت کر رہے تھے۔

استنبول کے تقسم اسکوائر پر پی ٹی آئی کے سربراہ کی برطرفی کے خلاف احتجاج کرنے پر دو درجن سے زائد پاکستانی شہریوں کو بھی گرفتار کیا گیا اور بعد میں رہا کر دیا گیا۔

دریں اثناء پاکستان کے مختلف شہروں میں بھی ریلیاں نکالی گئی ہیں کیونکہ کراچی اور پشاور میں زبردست اجتماعات دیکھنے میں آئے۔

سابق وزیر اعظم سے بھی توقع ہے کہ وہ 21 اپریل کو ملک کے ثقافتی دارالحکومت لاہور میں ہونے والے ایک عوامی جلسے میں اپنے پچھلے لوگوں سے ایک ‘بڑے سرپرائز’ کا اعلان کریں گے۔

مزید پڑھنے کے لیے یہاں پر کلک کریں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں