قائم مقام سپیکر قاسم سوری نے پی ٹی آئی کے 123 ایم این ایز کے استعفے منظور کر لیے

قائم مقام سپیکر قاسم سوری نے پی ٹی آئی کے 123 ایم این ایز کے استعفے منظور کر لیے

قائم مقام سپیکر قاسم سوری نے پی ٹی آئی کے 123 ایم این ایز کے استعفے منظور کر لیے

اسلام آباد – قومی اسمبلی کے قائم مقام سپیکر قاسم خان سوری نے جمعرات کو سابق حکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے 123 قانون سازوں کے استعفے منظور کر لیے۔

پیر کو نئے وزیر اعظم کے انتخاب کے لیے ووٹنگ شروع ہونے سے قبل منحرف افراد اور کچھ اتحادی اراکین کے علاوہ پی ٹی آئی کے قانون سازوں نے اجتماعی طور پر قومی اسمبلی سے استعفیٰ دے دیا تھا۔

قاسم سوری، جنہوں نے اس سے قبل سابق وزیراعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کو ایک ایسے اقدام میں رد کر دیا تھا جسے سپریم کورٹ نے منسوخ کر دیا تھا، نے ٹویٹ کیا کہ انہوں نے استعفے قبول کرتے ہوئے قواعد پر عمل کیا۔ اس حوالے سے قومی اسمبلی سیکرٹریٹ نے نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا ہے۔

سوشل میڈیا پوسٹ میں قاسم سوری نے کہا کہ انہیں 125 ارکان اسمبلی کے استعفے موصول ہو چکے ہیں لیکن دو ارکان کے استعفے قبول نہیں کیے گئے کیونکہ انہوں نے ذاتی طور پر جمع نہیں کروائے تھے۔

قبل ازیں، معزول وزیراعظم عمران خان نے ایم این ایز کے استعفوں کا خیر مقدم کیا۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی ‘امریکی حکومت کی تبدیلی’ کے خلاف ایک خودمختار پاکستان کے لیے کھڑی ہے جو مجرموں کو اقتدار میں لاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عبوری ضمانت پر ایک شخص کا بطور وزیراعظم پاکستان انتخاب کسی بھی خوددار آزاد قوم کی توہین ہے۔

بڑے پیمانے پر استعفوں کے بعد، پی ٹی آئی نے قومی اسمبلی کے ناراض ارکان کی نااہلی کے لیے سپریم کورٹ (ایس سی) سے رجوع کیا۔

سابق حکمران جماعت نے اس سے قبل اپوزیشن پر بدعنوان طریقوں میں ملوث ہونے اور قانون سازوں کو خریدنے کا الزام لگایا تھا۔ پی ٹی آئی کی جانب سے دائر درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ پی ٹی آئی کے منحرف ارکان کو آئین کے آرٹیکل 63-A کے تحت تاحیات پارلیمانی امور سے نااہل قرار دیا جائے۔

اس سے قبل، پی ٹی آئی نے اپنے اختلافی قانون سازوں کو وزیر اعظم عمران کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کی کوششوں میں مبینہ طور پر اپوزیشن جماعتوں کی مدد کرنے پر شوکاز نوٹس جاری کیے تھے۔

مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں