میرپور میں برطانوی شہری کی بیوی، اس کے بھتیجے کے ‘جعلی اغوا’ کی منصوبہ بندی کرنے والا شخص گرفتار

میرپور میں برطانوی شہری کی بیوی، اس کے بھتیجے کے 'جعلی اغوا' کی منصوبہ بندی کرنے والا شخص گرفتار

میرپور میں برطانوی شہری کی بیوی، اس کے بھتیجے کے ‘جعلی اغوا’ کی منصوبہ بندی کرنے والا شخص گرفتار

مظفر آباد – میرپور پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے مالی تنازعہ طے کرنے کے لیے برطانوی شہری خاتون اور اس کے بھتیجے کے جعلی اغوا کی منصوبہ بندی کرنے پر کم از کم چار افراد کو گرفتار کیا ہے۔
آزاد جموں و کشمیر کے دوسرے بڑے شہر (اے جے کے) میں قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کہا کہ انہوں نے دو افراد کے اغوا کے جعلی کیس کا پتہ لگایا اور دونوں کو بازیاب کرالیا۔

میرپور ڈویژن پولیس کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل ڈاکٹر خالد چوہان اور میرپور کے ایس ایس پی کامران علی نے ایک نیوز کانفرنس میں میڈیا کو واقعے کے بارے میں بریفنگ دی۔ ان کا کہنا تھا کہ کیس کو جدید خطوط پر تفتیش کے ذریعے حل کیا گیا ہے۔

اس سال 15 فروری کو پہلی بار یہ اطلاع ملی تھی کہ زاہدہ پروین (55) اور اس کے بھتیجے ملک الیاس کو اسلام گڑھ ٹاؤن میں اس وقت اغوا کیا گیا جب وہ ضلع میرپور کے علاقے دادیال ٹاؤن جا رہے تھے۔

ڈی آئی جی چوہان نے کہا کہ پولیس نے تحقیقات شروع کیں اور اسلام گڑھ تھانے سے تقریباً دو کلومیٹر دور ایک کار ملی۔ ان کا کہنا تھا کہ لاوارث گاڑی کے قریب سے ٹوٹی ہوئی چوڑیاں اور خون کے دھبے ملے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اغوا کے اس فرضی کیس میں ملوث چار ملزمان کو اب تک گرفتار کیا جا چکا ہے۔ بعد میں پتہ چلا کہ ملزمان نے مالی تنازعہ طے کرنے کے لیے اغوا کا ڈرامہ رچایا۔

ضلعی پولیس سربراہ کامران علی نے میڈیا کو بتایا کہ برطانوی شہری زاہدہ پروین کا شوہر غلام مرتضی اغوا کے اس جعلی ڈرامے کا ماسٹر مائنڈ تھا۔

مزید پڑھنے کے لیے یہاں پر کلک کریں

100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں