وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی افغانستان مذاکرات میں شرکت کے لیے چین پہنچ گئے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی افغانستان مذاکرات میں شرکت کے لیے چین پہنچ گئے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی افغانستان مذاکرات میں شرکت کے لیے چین پہنچ گئے۔

بیجنگ: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی افغانستان کے ہمسایہ ممالک کے تیسرے سربراہ اجلاس میں شرکت کے لیے منگل کو چین پہنچ گئے۔

سرکاری نشریاتی ادارے کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین میں پاکستان کے سفیر معین الحق اور چینی وزارت خارجہ کے سینئر حکام نے پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کے قریبی ساتھی قریشی کا ہوانگشن انٹرنیشنل ایئرپورٹ پہنچنے پر استقبال کیا۔

قریشی جو کہ سیکریٹری خارجہ سہیل محمود اور افغانستان کے لیے خصوصی نمائندے محمد صادق کے ہمراہ ہیں، افغانستان سے متعلق تیسرے موٹ میں شرکت کے لیے پڑوسی ملک پہنچے جس میں روسی اور ایرانی سفیر بھی شرکت کریں گے۔

وزیر خارجہ اپنے خطاب کے دوران خطے بالخصوص جنگ زدہ افغانستان میں امن کے لیے مشترکہ کوششوں اور ٹھوس اقدامات کی ضرورت پر زور دیں گے۔

افغانستان کے لیے چین کے ایلچی یو ژیاؤونگ اس اجلاس کی میزبانی کریں گے جب کہ ایک امریکی نمائندہ مبینہ طور پر دیگر ممالک کے ساتھ ایک اہم موڈ میں شامل ہوگا۔

پڑوسی ممالک کے وزارتی اجلاس میں شرکت کے علاوہ وزیر خارجہ شریک ممالک کے ہم منصبوں سے بات چیت کریں گے۔

اس سے قبل، پاکستان نے ستمبر 2021 میں افغانستان کی صورت حال پر علاقائی نقطہ نظر کو تیار کرنے کے مقصد سے پڑوسی ممالک کے فارمیٹ کا آغاز کیا تھا۔

پاکستان نے 8 ستمبر 2021 کو پڑوسی ممالک کے وزرائے خارجہ کی پہلی میٹنگ کی میزبانی کی۔

“پاکستان خطے میں پائیدار امن اور استحکام کے فروغ کے لیے افغانستان کے بارے میں علاقائی نقطہ نظر کی مکمل حمایت کرتا ہے۔ دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ پاکستان پرامن، مستحکم، خود مختار، خوشحال اور منسلک افغانستان کے مشترکہ مقاصد کو آگے بڑھانے کے لیے عالمی برادری کی کوششوں کی حمایت جاری رکھے گا۔

چین کا دورہ مکمل کرنے کے بعد وزیر خارجہ ماسکو جائیں گے۔

قریشی کا دورہ ملک کے موجودہ سیاسی بحران اور یوکرین کے ساتھ روس کی جنگ کی روشنی میں اہم خیال کیا جا رہا ہے جب کہ پاک چین حکام دو طرفہ تعاون پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔

مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں