او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کا 48 واں اجلاس آج اسلام آباد میں شروع ہوگا۔

او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کا 48 واں اجلاس آج اسلام آباد میں شروع ہوگا۔

اسلام آباد – اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے وزرائے خارجہ کی کونسل کا 48 واں اجلاس آج (منگل) سے اسلام آباد میں شروع ہو رہا ہے۔

دو روزہ وزارتی کانفرنس کا موضوعی توجہ ‘اتحاد، انصاف اور ترقی کے لیے شراکت داری’ پر ہے۔

اجلاس میں شرکت کرنے والے او آئی سی کے رکن اور مبصر ممالک کے وزرائے خارجہ اور اعلیٰ سطحی معززین بھی بطور مہمان خصوصی 23 مارچ کو یوم پاکستان پریڈ کا مشاہدہ کریں گے۔

چین کے سٹیٹ کونسلر اور وزیر خارجہ وانگ یی بطور مہمان خصوصی شرکت کریں گے۔

غیر او آئی سی ممالک کے سینئر حکام، اقوام متحدہ، عرب لیگ اور خلیج تعاون کونسل سمیت علاقائی اور بین الاقوامی تنظیموں کے سینئر نمائندے بھی شرکت کریں گے۔

وزیراعظم عمران خان منگل کو افتتاحی اجلاس سے کلیدی خطاب کریں گے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی وزرائے خارجہ کونسل کی صدارت کریں گے۔

او آئی سی اجلاس کا ایجنڈا

عالمی اور علاقائی منظرناموں کا جائزہ لینے کے علاوہ، کانفرنس میں فلسطین اور جموں و کشمیر کے لوگوں کے ساتھ اپنے اراکین کی یکجہتی اور حمایت کا اعادہ کیا جائے گا۔

یہ اسلامو فوبیا سے لڑنے کے اپنے عزم کا اعادہ کرے گا اور پائیدار ترقی کے اہداف کی طرف پیش رفت میں ماحولیاتی تبدیلی، ویکسین کی عدم مساوات اور کٹاؤ کے اثرات کا مقابلہ کرنے کے لیے حکمت عملیوں پر تبادلہ خیال کرے گا۔

اس کے علاوہ، کانفرنس میں بھارت کے غیر قانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر میں سنگین انسانی حقوق اور انسانی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔ او آئی سی رابطہ گروپ کا جموں و کشمیر پر وزارتی اجلاس بھی کانفرنس کے موقع پر ہوگا۔

وزارتی اجلاس میں افغانستان میں انسانی صورتحال سے نمٹنے کے لیے گزشتہ سال دسمبر میں اسلام آباد میں منعقدہ OIC-CFM کے غیر معمولی اجلاس میں کیے گئے فیصلوں کا جائزہ لیا جائے گا۔

او آئی سی کے سربراہ پاکستان پہنچ گئے۔

او آئی سی کے سیکرٹری جنرل حسین برہم طحہ او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کے 48ویں اجلاس میں شرکت کے لیے اسلام آباد پہنچ گئے۔

مقامی میڈیا کی رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ چاڈ کے سیاستدان کا استقبال وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب، نمائندہ خصوصی برائے مذہبی ہم آہنگی محمد طاہر اشرفی اور وزارت خارجہ کے حکام نے کیا۔

وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے طحہٰ کے ساتھ وزرائے خارجہ کی 48ویں کونسل کے ایجنڈے کا جائزہ لیا اور اس معاملے سے متوقع نتائج پر بھی تبادلہ خیال کیا۔

دونوں نے مسلم دنیا کے مسائل اور او آئی سی کے کردار پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ ایف ایم قریشی نے پاکستان کے لیے 48ویں OIC-CFM کی خصوصی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی، کیونکہ یہ پاکستان کی آزادی کے 75ویں سال کے جشن کے موقع پر تھا۔

او آئی سی کے سربراہ نے اسلام آباد کو سی ایف ایم کی پاکستان کی سربراہی کے دوران او آئی سی سیکرٹریٹ کی مکمل حمایت اور تعاون کا یقین دلایا۔

پاکستان کل سے اسلام آباد میں اسلامی تعاون تنظیم کے وزرائے خارجہ کی کونسل کے 48ویں اجلاس کی میزبانی کر رہا ہے۔

مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں