عالمی بینک نے پاکستان میں سستی رہائش کے منصوبوں کے لیے 435 ملین ڈالر کی منظوری دے دی۔

عالمی بینک نے پاکستان میں سستی رہائش کے منصوبوں کے لیے 435 ملین ڈالر کی منظوری دے دی۔

اسلام آباد – عالمی بینک نے جمعہ کو پاکستان میں کم آمدنی والے لوگوں کے لیے سستی رہائش تک رسائی اور رہن کی مالی مدد کے لیے 435 ملین ڈالر کے پیکج کی منظوری دی۔
امریکہ میں مقیم مالیاتی قرض دہندہ کے بورڈ آف ایگزیکٹو ڈائریکٹرز نے پیکیج کی منظوری دی۔ پاکستان ہاؤسنگ فنانس پروجیکٹ، پنجاب اربن لینڈ سسٹمز انہانسمنٹ پروجیکٹ، اور پنجاب افورڈ ایبل ہاؤسنگ پروگرام کو اس پیکج کے تحت فنڈز ملیں گے۔

اس اقدام کا مقصد کم آمدنی والے خاندانوں کو رہائش کے لیے بااختیار بنانا ہے جب کہ اس سے زمین کی مدت کے حقوق کو بہتر بنانے میں بھی مدد ملے گی۔

ورلڈ بینک کے کنٹری ڈائریکٹر برائے پاکستان ناجی بینہسین نے کہا: “پاکستان میں سستی اور قابل رسائی مکانات کی بہت زیادہ مانگ ہے، جو کہ 200 ملین سے زیادہ لوگوں کا گھر ہے اور جنوبی ایشیا کا سب سے زیادہ شہری آبادی والا ملک ہے۔”

بینہسین نے مزید کہا کہ یہ منصوبے نجی شعبے سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اور ان لوگوں کے لیے رہن کے اختیارات تک رسائی کی سہولت فراہم کر کے ہاؤسنگ کی ضروریات کو پورا کرنے میں معاون ثابت ہوں گے جو فی الحال گھر خریدنے کے لیے فنانسنگ تک رسائی حاصل نہیں کر سکتے۔ وہ جائیداد کے حقوق کو بھی مضبوط کریں گے اور آب و ہوا کے لیے لچکدار، سستی رہائش کی ترقی کی فراہمی میں اضافہ کریں گے۔

بین الاقوامی مالیاتی ادارے نے کہا کہ پنجاب افورڈ ایبل ہاؤسنگ پروگرام کو 200 ملین ڈالر ملیں گے کیونکہ اس منصوبے کا مقصد ملک کے سب سے زیادہ آبادی والے علاقے پنجاب میں تقریباً 77,000 لوگوں، خاص طور پر کم آمدنی والے گھرانوں کو سہولت فراہم کرنا ہے۔

مزید برآں، یہ پیکیج مخلوط آمدنی والے ہاؤسنگ ترقیات کے لیے نجی فنانسنگ کی حوصلہ افزائی کرے گا۔

وزیر اعظم کی میرا پاکستان، میرا گھر ہاؤسنگ سکیم کے ذریعے “کم آمدنی والے گھرانوں میں گھر کی ملکیت بڑھانے کے لیے سستی رہن تک رسائی کو بڑھانے” کے لیے $85 ملین کی رقم خرچ کی جائے گی۔
دریں اثنا، پنجاب اربن لینڈ سسٹمز انہانسمنٹ پروجیکٹ پر $150 خرچ کیے جائیں گے۔ اس منصوبے کا مقصد زمین کی انتظامیہ کو مضبوط کرنا اور کم قیمت پر ہاؤسنگ سکیموں کے لیے موزوں علاقوں کی نشاندہی کرنا ہے بلکہ صوبائی حکومت کو صوبے بھر میں زمین کی رجسٹریشن کو ڈیجیٹل بنانے میں بھی مدد کرنا ہے۔

100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں