قندیل بلوچ کے بھائی قتل کیس میں بری

قندیل بلوچ کے بھائی قتل کیس میں بری

ملتان – لاہور ہائی کورٹ (ایل ایچ سی) نے پیر کو سوشل میڈیا کی مشہور شخصیت۔ قندیل بلوچ کے بہیمانہ قتل سے متعلق مقدمے میں اہم ملزم کو بری کر دیا۔
یہ فیصلہ لاہور ہائیکورٹ کے ملتان بنچ کے جسٹس سہیل ناصر نے قندیل بلوچ کے بھائی محمد وسیم کو ان کی والدہ کی جانب سے معافی۔ اور گواہوں کے بیانات سے مکر جانے کے بعد سنایا۔

2016 میں وسیم نے ماڈل کو پنجاب میں اس کی رہائش گاہ پر گلا دبا کر قتل کر دیا تھا۔ بعد ازاں قندیل کے والد محمد عظیم بلوچ نے اپنے بیٹے کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرایا تھا۔

ستمبر 2019 میں ملتان کی ماڈل کورٹ نے بہن کے قتل کے جرم میں۔ ماڈل کے بھائی کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔ اس نے ریکارڈ پر اپنی بہن کو نشہ آور ادویات دینے۔ اور قتل کرنے کا اعتراف کیا تھا جب اسے خصوصی مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا گیا۔

تاہم قندیل کے دو بھائیوں۔ اور متنازعہ عالم مفتی عبدالقوی سمیت دیگر ساتھیوں کو عدم ثبوت کی بنا پر رہا کر دیا گیا تھا۔

وسیم نے لاہور ہائیکورٹ کے بینچ میں جمع کرائی گئی اپنی درخواست میں کہا کہ سیشن عدالت نے ان کے اور ان کی والدہ کے درمیان طے پانے والے معاہدے کو نظر انداز کیا، قندیل کے والد کا انتقال ہو چکا ہے۔

جسٹس سہیل نے دلائل سننے کے بعد کیس میں وسیم کو بری کر دیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں