لاہور کے سابق ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف کو ملازمت سے برطرف کر دیا گیا۔

لاہور کے سابق ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف کو ملازمت سے برطرف کر دیا گیا۔

لاہور – وفاقی حکومت نے بدھ کے روز لاہور کے۔ سابق ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف کو انکوائری میں بدعنوانی کا الزام ثابت ہونے پر ملازمت سے برطرف کر دیا۔
اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کی طرف سے جاری کردہ ایک نوٹیفکیشن کے مطابق۔ “سیکرٹری اسٹیبلشمنٹ ڈویژن بطور اتھارٹی سول سرونٹس (Efficiency and Discipline) رولز 2020 کے رول 2(1) (e) کے مطابق۔ سول سرونٹس (تعیناتی) کے رول 6 کے ساتھ پڑھیں۔ پروموشن اینڈ ٹرانسفر) رولز، 1973 نے ڈاکٹر حیدر اشرف (PSP/BS-19) پر “خدمات سے برطرفی” کا ایک بڑا جرمانہ عائد کیا ہے۔ جو کہ قاعدہ 4(3) کے ساتھ پڑھے جانے والے قاعدہ 7 (1) کے مطابق فوری اثر کے ساتھ ہے۔ (e) سول سرونٹ (Efficiency and Discipline) رولز، 2020۔ جیسا کہ ان کے خلاف 27.09.2021 کے ایون نمبر کے وجہ بتاو نوٹس کے ذریعے شروع کی گئی تادیبی کارروائی کے دوران بدانتظامی کا الزام ثابت ہوا تھا۔

“ڈاکٹر حیدر اشرف کو سول سرونٹس (اپیل) رولز 1977 کے تحت اس نوٹیفکیشن کے۔ اجراء کی تاریخ سے 30 دن کے اندر اپیلٹ اتھارٹی میں اپیل کرنے کا حق حاصل ہوگا۔

ڈاکٹر حیدر اشرف 2018 میں ڈی آئی جی آپریشنز لاہور رہے۔ لیکن مزید پڑھائی کے بہانے ملک چھوڑ کر کینیڈا چلے گئے۔

قومی احتساب بیورو (نیب) نے سابق اعلیٰ پولیس افسر کے۔ خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کے ساتھ ساتھ سرکاری فنڈز میں مبینہ غبن پر بھی انکوائری شروع کی تھی۔

مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں