کے پی کے بلدیاتی انتخابات: پشاور کے میئر کے انتخابات میں جے یو آئی ف کو برتری حاصل ہے۔

کے پی کے بلدیاتی انتخابات: پشاور کے میئر کے انتخابات میں جے یو آئی ف کو برتری حاصل ہے۔

جسے پی۔ ٹی۔ آئی۔ کے لیے پریشان کن قرار دیا جا رہا ہے۔ جمعیت علمائے اسلام فضل (جے۔ یو۔ آئی۔ ایف) کے امیدوار زبیر علی نے پیر کو پشاور کے میئر کے عہدے کے لیے حکمران جماعت پر برتری حاصل کر لی ہے۔

285 پولنگ اسٹیشنز کے غیر سرکاری غیر حتمی نتائج کے مطابق جے۔ یو۔ آئی۔ (ف) کے امیدوار نے اب تک 32 ہزار 275 ووٹ حاصل کیے ہیں۔ جب کہ پی ٹی آئی کے رضوان بنگش 26 ہزار 695 ووٹ لے کر پیچھے ہیں۔

بنوں میں جے۔ یو۔ آئی۔ ف کے ایک اور امیدوار عرفان اللہ درانی نے میئر کے انتخاب میں پی۔ ٹی۔ آئی۔ کے امیدوار پر برتری حاصل کر لی ہے۔ عرفان اللہ نے اب تک 37,458 ووٹ حاصل کیے ہیں۔ جب کہ پی ٹی آئی کے امیدوار اقبال خان جدون نے 23,867 ووٹ حاصل کیے ہیں۔

تحریک انصاف مردان، کوہاٹ اور نوشہرہ کی تحصیلوں میں شکست کا مزہ چکھ چکی ہے۔ مردان سٹی میئر کے انتخاب کے لیے عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے حمایت اللہ مایار نے پی۔ ٹی آئی کے امیدوار پر وسیع برتری حاصل کر لی ہے کیونکہ جے یو آئی-ایف کے مدمقابل ان کے پیچھے دوسرے نمبر پر ہیں۔

0

کوہاٹ سٹی کے میئر کے انتخاب میں جے۔ یو۔ آئی۔ (ف) کے شیر زمان آگے ہیں جبکہ آزاد امیدوار شفیع اللہ دوسرے نمبر پر ہیں۔

نوشہرہ میں، پی۔ ٹی۔ آئی۔ ایک اور پریشان کن شکست کی طرف بڑھ رہی ہے۔ کیونکہ غیر سرکاری نتائج کے مطابق اے این پی کے امیدوار غیور علی خان نے الیکشن جیت لیا ہے۔

دوسری جانب تحریک انصاف ضلع بونیر کی چھ میں سے چار تحصیلیں جیتنے میں کامیاب ہو گئی ہے۔ بونیر کے خدو خیل ضلع میں بھی پی ٹی آئی کے امیدوار کو برتری حاصل ہے جبکہ جے یو آئی (ف) نے چارسدہ کی تینوں تحصیلوں میں اپنی برتری بڑھا دی ہے۔

ضلع خیبر میں تحریک اصلاح پاکستان نے برتری حاصل کر لی ہے جبکہ ضلع صوابی میں تحریک انصاف کے عطاء اللہ خان تحصیل کونسل کے چیئرمین منتخب ہو گئے ہیں۔

دریں اثنا، ضلع مردان کی تحصیل تخت بائی، تحصیل کاٹلنگ اور تحصیل رستم میں جے یو آئی (ف) کے امیدوار آگے ہیں۔

دوسری جانب مردان کی تحصیل گڑھی کپورہ میں اے این پی کو اپنے حریفوں پر برتری حاصل ہے۔

مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں