الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ای وی ایم پر حکومت کی ڈیڈ لائن کو مسترد کر دیا۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے ای وی ایم پر حکومت کی ڈیڈ لائن کو مسترد کر دیا۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے وفاقی کابینہ کی جانب سے ملک میں انتخابات کے انعقاد کے لیے الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای۔ وی۔ ایم۔) کے استعمال کے لیے دی گئی ڈیڈ لائن کو مسترد کر دیا ہے۔

چیف الیکشن کمشنر (سی۔ ای۔ سی۔) نے یہ بھی کہا ہے۔ کہ وہ ای وی ایم پر حکمت عملی وضع کرنے کے لیے پارلیمنٹ سے مدد لیں گے۔

منگل کو وفاقی کابینہ نے فیصلہ کیا کہ ای۔ وی۔ ایم۔ کی خریداری کے لیے ٹینڈر اگلے ماہ جاری کیے جائیں گے۔ کابینہ نے آئی ووٹنگ کے لیے ایک آخری تاریخ بھی مقرر کی ہے۔ جس میں نیشنل ڈیٹا بیس رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کو آئی ووٹنگ کے لیے اپنے سسٹم کو اپ ڈیٹ کرنے کے لیے چار ماہ کا وقت دیا گیا ہے۔

چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ نے اسلام آباد میں میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا۔ کہ ای۔ سی۔ پی۔ بلدیاتی انتخابات میں ای وی ایم ٹرائلز پر وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کے جواب کا انتظار کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک کمیٹی انتخابات میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے استعمال کے قوانین کا جائزہ لے رہی ہے۔

1

انہوں نے کہا کہ ای وی ایم کے استعمال کا فیصلہ کمیٹیوں کی سفارشات کی روشنی میں کیا جائے گا۔

سکندر سلطان راجہ نے حکومت کی تجویز کردہ ٹائم لائن کو مسترد کرتے ہوئے اپنی پوزیشن واضح کی۔ انہوں نے کہا کہ کسی دباؤ میں آکر استعفیٰ نہیں دیں گے۔

ای۔ وی۔ ایم۔ سے متعلق قواعد الیکشن کمیشن کی طرف سے کمیٹی کی سفارشات کی روشنی میں وضع کیے جائیں گے۔ جہاں ضروری ہوا، ہم پارلیمنٹ سے بھی رجوع کریں گے۔

سکندر سلطان راجہ نے یہ بھی کہا کہ ایک دوسری کمیٹی ای وی ایم اور آئی ووٹنگ پر ہندوستان سمیت مختلف ممالک کے نظام کا جائزہ لے رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ای سی پی اگلے عام انتخابات سے قبل ای وی ایم کی فراہمی اور عملے کی تربیت سمیت کئی امور کا جائزہ لے رہا ہے۔

عام انتخابات شفاف ہوں گے۔ ہم کسی قسم کی مداخلت برداشت نہیں کریں گے۔”

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں