بگڑتی ہوئی فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لیے لاہور میں یورو ٹو فیول پر پابندی عائد کر دی گئی۔

بگڑتی ہوئی فضائی آلودگی سے نمٹنے کے لیے لاہور میں یورو ٹو فیول پر پابندی عائد کر دی گئی۔

پنجاب کے وزیر خزانہ ہاشم جواں بخت نے منگل کے روز انکشاف کیا۔ کہ اگلے ماہ سے لاہور میں صرف یورو 5 پیٹرولیم مصنوعات کی فروخت کی اجازت ہوگی۔

منگل کو پراونشل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (PDMA) کے ہیڈ آفس میں انسداد سموگ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے۔ انہوں نے لاہور ڈویژن کے کمشنر کو ہدایت کی کہ شہر میں صرف اعلیٰ معیار کے ایندھن کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔

انہوں نے متعلقہ حکام کو یہ بھی ہدایت کی کہ۔ وہ یورو-2 فیول پروڈیوسرز کو خود کو اپ گریڈ کرنے کے لیے کہیں۔

سکربر کے بغیر چلنے والی فیکٹریوں کو بند کرنے کا حکم دیتے ہوئے۔ وزیر نے مزاحمت کا مظاہرہ کرنے والوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کا انتباہ دیا۔ انہوں نے زور دیا کہ۔ کسی بھی صنعتی یونٹ کے لیے ٹائر، ربڑ اور پلاسٹک جلانے میں کوئی نرمی نہیں کی جائے گی، انہوں نے کہا کہ مقامی انتظامیہ شہر میں سموگ سے متعلق پابندیوں پر سختی سے عمل درآمد کو یقینی بنائے گی۔

1

بخت نے کہا کہ پنجاب ریلیف کمشنر اینٹوں کے بھٹوں کو نئی زگ زیگ ٹیکنالوجی میں منتقل کرنے اور فرسودہ اینٹوں کے بھٹوں کی بندش کا ذمہ دار ہوگا۔

پولیس اور محکمہ ٹرانسپورٹ شہر میں ماحولیاتی آلودگی کا باعث بننے والی گاڑیوں کو ضبط کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پائیدار ٹرانسپورٹ پالیسی بنانے کے لیے اعداد و شمار اکٹھے کیے جائیں گے۔
وزیر نے کہا کہ مقامی انتظامیہ فصلوں کی باقیات اور کوڑا کرکٹ کو جلانے کے خلاف بھی کارروائی کرے گی۔ صوبائی دارالحکومت کی ہوا کے معیار کی نگرانی کے لیے صوبائی محکمہ ماحولیات کو تمام وسائل فراہم کیے جائیں گے۔

انہوں نے متعلقہ حکام کو شہر میں سموگ اور ماحولیاتی آلودگی پر لگام لگانے کے لیے طویل مدتی حکمت عملی تیار کرنے کی بھی ہدایت کی۔ نجی ٹرانسپورٹ کلچر کی حوصلہ شکنی کے لیے حکومت مسافروں اور طلبہ کے لیے پبلک ٹرانسپورٹ کے استعمال کی حوصلہ افزائی کرے گی۔ انہوں نے متعدد گاڑیوں والے شہریوں سے اپیل کی کہ وہ رضاکارانہ طور پر اپنی گاڑیوں کا استعمال محدود کریں۔

2

انہوں نے صوبائی محکمہ ٹرانسپورٹ کو یہ بھی ہدایت کی کہ۔ تمام گاڑیوں پر دھواں کنٹرول کرنے والے آلات کی تنصیب کو یقینی بنایا جائے۔ اس سلسلے میں کار ساز اداروں کو بھی آن بورڈ لیا جائے۔

یو۔ ایس۔ ایئر کوالٹی انڈیکس کی 200 پوائنٹس سے زیادہ درجہ بندی کے ساتھ لاہور کا ماحول منگل کو مسلسل چوتھے دن بھی ’انتہائی غیر صحت بخش‘ رہا۔

ماحولیاتی ماہرین نے خبردار کیا ہے۔ کہ لاہور کی ہوا میں PM2.5 کا ارتکاز اس وقت ڈبلیو ایچ او کی سالانہ ایئر کوالٹی گائیڈ لائن ویلیو سے 30.8 گنا زیادہ ہے جو انسانوں اور جانوروں دونوں کے لیے بہت نقصان دہ ہے۔

طبی اور صحت کے ماہرین نے شہریوں کو کھلی جگہوں پر فیس ماسک اور آئی پہننے کا مشورہ دیا ہے۔ کھلے مقامات پر غیر ضروری دورے سے گریز کیا ہے۔

مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں