سعد رضوی سمیت TLP کے 577 کارکنوں کو فورتھ شیڈول سے نکال دیا گیا۔

سعد رضوی سمیت TLP کے 577 کارکنوں کو فورتھ شیڈول سے نکال دیا گیا۔

سعد رضوی سمیت TLP کے 577 کارکنوں کو فورتھ شیڈول سے نکال دیا گیا۔

اسلام آباد – پاکستان کی جانب سے کالعدم تنظیموں کی فہرست سے تحریک لبیک پاکستان T.L.P کا نام نکالنے کے چند دن بعد، حکومت نے بھی سعد رضوی TLP اور دیگر 577 کارکنوں کو انسداد دہشت گردی ایکٹ کے فورتھ شیڈول سے خارج کر دیا۔

محکمہ داخلہ پنجاب کی جانب سے نوٹیفکیشن جاری کرنے کے بعد جمعرات کو مقامی میڈیا نے اطلاع دی۔ حالیہ قدم، رائٹ ونگ کا جماعت نے موجودہ حکومت کے ساتھ ایک معاہدہ کرنے کے بعد سام نے آیا۔

رضوی، ٹی۔ ایل۔ پی۔ کے دیگر کارکنوں کو اس فہرست سے نکال دیا گیا۔ جس میں دہشت گردی اور فرقہ واریت کے مشتبہ افراد کو انسداد دہشت گردی ایکٹ کے تحت ڈسٹرکٹ انٹیلی جنس حکام کی ریکمینڈیشن پر رکھا گیا تھا۔

نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے۔ کہ “وفاقی حکومت نے ایکٹ کے سیکشن 11-U کی ذیلی دفعہ (I) کے تحت تحریک لبیک پاکستان ٹی۔ ایل۔ پی۔ کا نام کالعدم تنظیم کے طور پر ایکٹ کے پہلے شیڈول سے ہٹا دیا ہے۔”

نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے۔ کہ “وفاقی حکومت نے ایکٹ ibid کے سیکشن 11-U کی ذیلی دفعہ (I) کے تحت تحریک لبیک پاکستان TLP کا نام کالعدم تنظیم کے طور پر ایکٹ کے پہلے شیڈول سے ہٹا دیا ہے۔”

اس سے قبل، کابینہ نے وفاقی وزارت قانون کی جانب سے پیش کی گئی سفارشات کی سمری کی منظوری کے بعد، عہدیداروں نے پارٹی کی پابندی کو منسوخ کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا۔

ٹی ایل پی نے ملک کے دارالحکومت کی طرف اپنے مطلوبہ لانگ مارچ کو ختم کرنے پر بھی اتفاق کیا۔ مزید کہا کہ اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا۔ کہ حکام کی جانب سے کارکنوں کے خلاف کوئی قانونی کارروائی نہیں کی جائے گی۔

..مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں