کابل کے Hospital میں دھماکوں میں کم از کم 19 افراد ہلاک، متعدد زخمی

کابل کے Hospital میں دھماکوں میں کم از کم 19 افراد ہلاک، متعدد زخمی

کابل کے Hospital میں دھماکوں میں کم از کم 19 افراد ہلاک، متعدد زخمی۔

افغان میڈیا کے مطابق، منگل کو افغان دارالحکومت میں دو زور دار دھماکوں میں تقریباً 19 افراد ہلاک اور 50 سے زائد زخمی ہوئے۔

طالبان میڈیا کے ترجمان کے حوالے سے رپورٹس میں کہا گیا ہے۔ کہ سردار محمد داؤد خان ملٹری Hospital کے قریب دو دھماکے ہوئے۔ طالبان نے کہا کہ “ایک دھماکہ فوجی ہسپتال کے گیٹ پر ہوا ہے۔ جبکہ دوسرا طبی سہولت سے تھوڑا دور ہوا ہے۔”، طالبان نے کہا۔

کچھ رپورٹس میں دعویٰ کیا گیا ہے۔ کہ کابل کے 10ویں ضلع میں 400 بستروں پر مشتمل اسپتال میں ہونے والا دھماکہ ایک کار بم تھا۔ جبکہ اس بارے میں کوئی سرکاری بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

مقامی رہائشیوں کی جانب سے شیئر کی گئی تصاویر اور ویڈیوز میں وسطی کابل کے سابق سفارتی زون میں ہونے والے دھماکوں کے بعد دھویں کے بادل دکھائی دے رہے ہیں۔

دریں اثنا، کسی بھی دہشت گرد تنظیم نے ان مہلک دھماکوں کی ذمہ داری قبول نہیں کی۔ جب کہ ایک افغان خبر رساں ایجنسی نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا کہ آئی۔ ایس۔ کے متعدد جنگجو اسپتال میں داخل ہوئے اور ان کی سیکیورٹی فورسز سے جھڑپ ہوئی۔

حالیہ حملے نے اگست میں طالبان کی جانب سے مغربی حمایت یافتہ حکومت کا تختہ الٹنے کے بعد سے ہلاکتوں کی بڑھتی ہوئی فہرست میں اضافہ کیا۔ جنگ سے تباہ حال ملک میں سیکیورٹی بحال کرنے کے ان کے دعوے کو نقصان پہنچایا۔

ISIS-K، جو کہ اسلامک اسٹیٹ کی ایک شاخ ہے، نے حال ہی میں طالبان کے قبضے کے بعد مساجد اور دیگر اہداف پر کئی حملے کیے ہیں۔

.مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں