ترک صدر اردگان کا مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت حل کرنے پر زور۔

ترک صدر اردگان کا مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت حل کرنے پر زور۔

ترک صدر اردگان کا مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت حل کرنے پر زور۔

ترک صدر طیب اردگان نے مسئلہ کشمیر پر اپنی مستقل اور واضح پوزیشن کا اعادہ کیا اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت تصفیے کا مطالبہ کیا۔

منگل کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 76 ویں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے۔ اردگان نے کہا کہ “ہم فریقین کے درمیان اور متعلقہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کے فریم ورک کے اندر بات چیت کے ذریعے۔ 74 سال سے کشمیر میں جاری مسئلے کو حل کرنے کے حق میں اپنا موقف برقرار رکھتے ہیں”۔

تاہم ، اس سال اردگان کی تقریر پچھلی تقریروں کے مقابلے میں ہلکی تھی ۔جس میں انہوں نے مسئلہ کشمیر کو فائرنگ کا مسئلہ قرار دیا۔

کشمیر کاز کی حمایت نے پڑوسی ملک انڈیا کی طرف سے سخت احتجاج کو جنم دیا ہے۔ جو کہ اسے ‘اندرونی معاملہ’ کہتا ہے۔

واشنگٹن میں مقیم ورلڈ کشمیر آگاہی فورم کے سیکرٹری جنرل نے اردگان کے مسئلہ کشمیر کے حوالے کی تعریف کرتے ہوئے کہا۔ کہ اقوام متحدہ میں ان کے الفاظ نے کشمیری عوام کی حوصلہ افزائی کی۔

دریں اثنا ، اردگان نے اپنی تقریر کے دوران فلسطینی اسرائیل تنازع کی نشاندہی کی۔ اور اسے ایک اہم ترین مسئلہ قرار دیا۔ جو کہ خطے میں عدم استحکام اور امن و سلامتی کے لیے خطرہ ہے۔

انہوں نے دو ریاستی حل تجویز کیا کیونکہ یہ امن عمل کی بحالی کے لیے انتہائی اہم ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ فلسطینی ریاست کا دارالحکومت ترکی کے لیے ‘بنیادی مقصد’ رہا ہے۔

..مزید پڑھیں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں